26-04-2018

پشاور ہائی کورٹ نے کرم ایجنسی میں ایک خاندان کے آٹھ افراد کی دھماکے میں جاں بحق ہونے کے بعد شہداء پیکج کے تحت مالی معاوضہ دینے کے لیے دائر درخواست پر مقامی انتظامیہ اور وفاقی حکومت سے جواب طلب کر لیا ہے۔

پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس یحیٰ افریدی اور جسٹس اعجاز انور نے گل نواز کی جانب سے وفاقی حکومت کے خلاف درخواست پر سماعت کی۔ عدالت کو بتایا گیا کہ رواں سال ک جنوری میں کرم ایجنسی میں سڑک کے کنارے بم دھماکے میں درخواست گزار کے خاندان کے آٹھ افراد جاں بحق ہوئے تھے، حکومت نے ان کو عام شہداء پیکج کے تحت مالی معاوضہ دیا جبکہ شہداء کے لیے سپیشل پیکج نہیں دیا ۔ لہٰذا تمام افراد کے لواحقین کو شہداء کے خصوصی پیکج کے تحت معاوضہ دیا جائے۔ عدالت نے مقامی انتظامیہ اور وفاقی حکومت سے جواب طلب کرلیا۔