07-09-2017

پشاور ہائی کورٹ نے صوبائی احتساب کمیشن کے ملازمین کی برطرفی روکنے سے متعلق حکم امتناعی میں توسیع کردی اور رٹ پٹیشن سماعت کےلئے ہائی کورٹ کے دوسرے بنچ کو منتقل کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس سید ارشد علی پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزار خیبر پختونخوا احتساب کمیشن کے اہلکار ہے جن کی تقرری مختلف ادارہ کے مختلف شعبوں میں دو ہزار چودہ میں ہوئی تھی تاہم دو ہزار سترہ میں صوبائی احتساب کمیشن نے نئے رولز وضع کئے اور ان کی آڑ میں درخواست گزاروں کو برطرف کیا جا رہا ہے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ درخواست گزاروں کی برطرفی روکی جائے ۔دوران سماعت چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی نے موقف اپنایا کہ چونکہ وہ ڈائریکٹر جنرل احتساب کمیشن کی تقرری کے لئے قائم کمیٹی کے رکن ہیں اس بناء پر وہ اس کیس کی سماعت نہیں کر سکتے ۔عدالت نے گزشتہ پیشی پرجاری حکم امتناعی میں توسیع کرتے ہوئے کیس دوسرے بنچ کو منتقل کرکے سماعت اگلی تاریخ تک ملتوی کردی ۔