26-07-2017

پشاور ہائی کورٹ نے صوبائی محتسب کی جانب سے پشاور ڈویلپمنٹ نے اتھارٹی کا کام بند کرنے اور ڈی جی کے خلاف کاروائی کا حکم معطل کرتے ہوئے ڈی جی کے خلاف کاروائی کرنے کی سفارشات پر عمل درآمد روک دیا ہے ۔عدالت نے آئندہ سماعت پر صوبائی محتسب سے وضاحت طلب کر لی ہے

جسٹس لال محمد جان خٹک اور جسٹس عبد الشکور پر مشتمل دو رکنی بنچ نے پی ڈی اے کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ صوبائی محتسب نے پی دی اے کو ختم کرنے اور ڈی جی کے خلاف محکمانہ کاروائی کرکے کام کرنے سے روکنے کےلئے حکومت کوسفارشات ارسال کی ہیں اور ساتھ ہی یہ بھی آرڈر جاری کیا ہے کہ اگر پی ڈی اے کو ختم نہ کیا گیا اور ڈی جی کو کام سے نہ روکا گیا تو اس کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی ۔ رٹ میں موقف اپنایا گیاکہ صوبائی محتسب کے پاس یہ اختیار نہیں ہے اور نہ ہی کسی محکمہ یا ادارہ میں مداخلت کرنے کا حق حاصل ہے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ صوبائی محتسب کے احکامات اور سفارشات کو کالعدم قرا ر دیا جائے ۔

عدالت نے دائر رٹ پر حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے صوبائی محتسب کے احکامات کو معطل کرتے ہوئے پی ڈی اے کو کام بند کرنے اور ڈی جی کے خلاف کاروائی کرنے سے روک دیا اور اس ضمن میں صوبائی محتسب سے وضاحت طلب کر لی ۔