08-06-2017

پشاور ہائی کورٹ نے صوبائی محتسب کی جانب سے ڈائریکٹر جنرل پی ڈی اے کو توہین عدالت  کیس کے خلاف دائر رٹ پر ان کی طلبی کو روک دی اور صوبائی حکومت سے جواب طلب کر لیاہے۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس محمد غضنفر خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے ڈی جی پی ڈی اے محمدسلیم وٹو کی جانب سے دائر رٹ  پٹیشن کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ صوبائی محتسب نے ڈائریکٹر جنرل پی ڈی اے کے دفتر کی تزئین و آرائش سے متعلق تفصیلات مانگی تھیں تاہم ڈی جی نے اپنے جواب میں واضح کیا کہ معاملہ چونکہ پشاور ہائی کورٹ میں زیر سماعت ہے اور رٹ پر حتمی فیصلہ تک تفیصلات نہیں دی جا سکتیں ۔ اس پر صوبائی محتسب نے ڈی جی پی ڈی اے کا جواب تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے انہیں غلط بیانی پر توہین عدالت کا مرتکب قرار دے کر طلب کیا ہے جو کہ کوئی قانونی اور آئینی جواز نہیں رکھتا۔