14-03-2017

پشاور ہائی کورٹ میں صوبہ بھر کے عوام کو صاف پانی کی فراہمی اور نہروں کی صفائی کے حوالے سے رٹ پٹیشن دائر کر دی گئی ہے جس میں عدالت عالیہ سے استدعا کی گئی ہے کہ صوبائی حکومت کو احکامات دیئے جائیں کہ فوری طور پر صوبہ کے مختلف علاقوں میں پانی کے نمونے اکٹھے کرکے کیمیکل اور بیکٹیریل ٹیسٹ کراکے رپورٹ عدالت میں پیش کرے ۔

رٹ میں عدالت سے یہ استدعا بھی کی گئی ہے کہ صوبے کے تمام ہوٹلوں م ریسٹورنٹس ، ہسپتالوں ، تعلیمی اداروں ، عدالتوں ، بس سٹینڈز اور دیگر پبلک مقامات پر فلٹریشن پلانٹ نصب کئے جائیں جبکہ پہلے سے موجود نصب فلٹریشن پلانٹس کی مرمت کروائی جائے ۔

دائر رٹ میں فاضل عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ حکومت کو یہ احکامات بھی جاری کئے جائیں کہ پشاور کی نہروں میں سیورج لائن اور گندگی پھینکنے پر پابندی عائد کی جائے اور پی سی آر ڈبلیو  آر کی رپورٹ  کے مطابق کیمیکل اور جراثیم سے آلودہ پانی کے برانڈ پر صوبے میں فروخت پر پابندی عائد کی جائے ۔