02-06-2017

خیبر پختونخوا حکومت نے صوبے کے وکلاء کو صحت انصاف کارڈز جاری کرنے پر آمادگی کا اظہار کیا ہے ۔یہ اظہار ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل خیبر پختونخوا نے دائررٹ پٹیشن کی سماعت کے دوران عدالت کے روبرو کیا۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ اورجسٹس لعل جان خٹک پر مشتمل دو رکنی بنچ نے خورشید خان ایڈوکیٹ کی جانب سے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ خیبر پختونخوا حکومت نے صوبے کے غرباء اور مستحق افراد کے لئے صحت انصاف کارڈ جاری کئے ہیں جس کے صحت کے بہترین اداروں میں عوام کو طبی سہولیات میسر کی جارہی ہیں اور اب اس منصوبے میں مختلف محکموں کے ملازمین بشمول عدلیہ کو بھی شامل کیا جا رہا ہے جبکہ صوبے کے وکلاء کی تعداد ہزاروں میں ہیں جنہیں حکومت کی جانب سے صحت سے متعلق  کوئی سہولت میسر نہیں لہذا وکلاء کو بھی صحت سہولت پروگرام کے منصوبے میں شامل کیا جائے کیونکہ صوبے کے سو فیصد عوام کو اس میں شامل کرنے پر بھی غور کیا جا رہا ہے ۔

دوران سماعت ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل خیبر پختوخوا نے عدالت کو بتایا کہ اس حوالےسے سیکرٹری لاء اور سیکرٹری صحت سے مشاورت کی جائے گی اور ان کی منظوری کے بعد وکلاء کو بھی اس پروگرام میں شامل کیا جا سکتا ہے ۔جس پر فاضل عدالت نے دائر رٹ پٹین کی سماعت اگلی پیشی تک ملتوی کردی۔