30-03-2018

پشاور ہائی کورٹ نے خیبر پختونخوا کے چودہ ٹیکسٹائل ملوں سے ممبر شپ فیس وصولی روک دی ہے۔

جسٹس قیصر رشید اورجسٹس محمد ایوب پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے  دو رکنی بنچ نے آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن کی جانب سے خیبر پختونخوا کےچودہ ٹیکسٹائل ملوں سےممبرشپ کی مد میں لاکھوں روپے وصول کرنے کے اقدام کے خلاف دائر رٹ درخواست کی سماعت کی۔

عدالت کوبتایاگیا کہ آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن نے خیبر پختونخوا کے چودہ ممبران کے سالانہ فیس میں دوگنا اضافہ کیا ہے اور ساٹھ لاکھ روپے ممبر شپ کی مد میں وصول کررہے ہیں جبکہ عدالت نے ایسوسی ایشن کے جنرل باڈی کو پرانے حساب سے ممبرشپ فیس کی وصولی کا حکم دیا لیکن اس کے باوجود ممبر شپ فیس میں اضافہ کردیا گیا ہے ۔

عدالت نے حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے ایسوسی ایشن کو خیبر پختونخوا کے چودہ ممبران سے نئے ممبر شپ فیس کی وصولی سے روک دیا ۔