27-07-2017

پشاور ہائی کورٹ نے خیبر پختونخوا کے سرکاری ہسپتالوں میں تین ہزار ڈاکٹروں کی بھرتی کے خلاف جاری حکم امتناعی میں توسیع کر دی اور چیئر مین صوبائی پبلک سروس کمیشن کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کرلیاہے۔

جسٹس لال جان خٹک اور جسٹس عبد الشکور پر مشتمل دو رکنی بنچ نے نو ڈاکٹروں کی جانب سے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزاروں نے چین سے ایم ایم بی ایس  کیا ہے اور پی ایم ڈی سی نے اس کی رجسٹریشن بھی کر رکھی ہے جبکہ کالج آف فزیشن اینڈ سرجن سے ایف سی پی ایس پارٹ ون کا امتحان بھی درخواست گزاروں نے پاس کیا ہے اب صوبائی حکومت پبلک سروس کمیشن کے ذریعے تین ہزار ڈاکٹروں کی بھرتی کر رہی ہے تاہم درخواست گزاروں کو چین میں ایم بی بی ایس کرنے کی بناء پر میرٹ لسٹ پر آخر میں رکھا گیا ہے اور ان کی اہلیت کے مطابق میرٹ لسٹ میں نمبر نہیں دیئے جا رہے ہیں جو کہ غیر قانونی ہے اور درخواست گزاروں کی حق تلفی ہوئی ہے ۔