30-06-2017

پشاور ہائی کورٹ نے ضلع ہنگو کے علاقہ زرگری میں بمباری سے متاثرہ خاندانوں کو مالی معاوضے کی ادائیگی سے متعلق رپورٹ طلب کر لی ہے ۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ اورجسٹس شکیل احمد پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزاروں کا تعلق ضلع ہنگو کے علاقہ زرگری سے ہے جہاں گیارہ جون دو ہزار نو کو بمباری کے باعث ان کے خاندان کے چھ افراد جاں بحق اور آٹھ زخمی ہوئے تھے اور ہائی کورٹ نے انہیں شہیدا پیکج دینے کا حکم دیا تھا۔

عدالت کو بتایا گیا کہ دو ہزار تیرہ میں سویلین پالیسی کے تحت شہید کےلئے پانچ لاکھ اور زخمی کےلئے دو لاکھ روپے معاوضہ مقرر کر رکھے تھے جبکہ ہائی کورٹ نے انہیں تیس لاکھ روپے ادا کرنے کے احکامات جاری کئے تھے جبکہ وزیر اعلی نے اب شہداء کےلواحقین کو پانچ لاکھ روپے فی کس اور زخمیوں کے لئے فی کس دو لاکھ روپے ادائیگی کی سمری منظور کی ہے لیکن وہ بھی ڈی سی آفس ادا کرنے میں رکاوٹیں پیدا کر رہی ہے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ متاثرہ خاندانوں کومعاوضے کی ادائیگی کے احکامت جاری کئے جائیں ۔فاضل عدالت نے ابتدائی دلائل کے بعد چھبیس جولائی تک عدالتی احکامات پر عمل درآّمد سے متعلق رپورٹ طلب کر لی ۔