17-04-2017

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے مردان کی عبدالولی خان یونیورسٹی میں طالبعلم مشال خان کو مبینہ توہین مذہب کے الزام پر تشدد کر کے قتل کرنے کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی خیبرپختونخوا سے آئندہ 36 گھنٹوں میں رپورٹ طلب کر لی ہے۔

واضح رہے کہ عبدالولی خان یونیورسٹی میں دو روز قبل مشتعل ہجوم نے شعبہ صحافت کے طالبعلم مشال خان کو توہین مذہب کے الزام میں قتل کر دیا تھا۔ تشدد کے اس واقعے میں دو طالبعلم زخمی ہوئے تھے جنھیں ہسپتال پہنچا دیا گیا تھا۔