15-03-2017

پشاور ہائی کورٹ نے عدالتی احکامات پر عمل درآمد نہ کرنے پر اسلامیہ کالج یونیورسٹی کے خلاف دائر چھ توہین عدالت درخواستوں پر احکامات جاری کئے ہیں کہ یا تو عدالتی احکامات پر فوری طور پر عمل درآمد یقینی بنایا جائے بصورت دیگر آئندہ سماعت پر وائس چانسلر اور رجسٹرار اسلامیہ کالج یونیورسٹی عدالت میں پیش ہوں ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر توہین عدالت درخواستوں کی سماعت کی ۔ جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ دائر مختلف ر ٹ درخواستوں پر عدالت نےاحکامات جاری کئے تھے تاہم ان احکامات پر عمل درآمد نہیں کیا جا رہا جو کہ توہین عدالت کے زمرے میں آتا ہے لہذا متعلقہ حکام کے خلاف توہین عدالت کی کاروائی عمل میں لائی جائے ۔

فاضل عدالت نے دلائل کے بعد حکم دیا کہ فوری طور پر عدالتی احکامات پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے بصورت دیگر اسلامیہ کالج یونیورسٹی کے وائس چانسلر اور رجسٹرار  آئندہ سماعت پرعدالت میں پیش ہوں ۔