07-06-2018

عدالتی احکامات اور چیف سیکرٹری کی واضح ہدایات کے باوجود محکمہ بحالی وآبادکاری(پارسا) کی جانب سے24 ملازمین کو گزشتہ8ماہ کی تنخواہوں کی عدم  ادائیگی پر  سیکرٹری ریلیف اور ڈائریکٹر جنرل پی ڈی ایم اے کے خلاف توہین عدالت کی درخواست پشاور ہائی کور ٹ میں دائر کر دی گئی ہے ۔

  دائر توہین عدالت درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ پشاور ہائی کورٹ نے پارسا سے نکالے جانے والے29ملازمین میں سے 24ملازمین کو دوبارہ بحال کرنے اور انہیں گزشتہ8ماہ کی تنخواہوں کی ادائیگی کے احکامات جاری کئے تھے جبکہ عدالتی احکامات کے بعد چیف سیکرٹری نے بھی سیکرٹری ریلیف اور ڈائریکٹر جنرل پی ڈی ایم اے/پارسا ملازمین کو تنخواہیں دینے کی ہدایت کی تھی تاہم  عدالتی احکامات کو8ماہ گزرنے کے باوجودملازمین کی بحالی اور انہیں گزشتہ 8ماہ کی تنخواہوں کی ادائیگی نہیں کی جا رہی جو توہین عدالت کے زمرے میں آتی ہے۔