20-09-2017

پشاور ہائی کورٹ نے سوات سے گرفتاری کے بعد عمر قید کی سزا پانے والے کالعدم تنظیم کے مبینہ ملزم کا ساہیوال جیل پنجاب میں طبی معائنہ کےلئے میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کے احکامات جاری کر دیئے ہیں ۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس اعجاز انور پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزار کے والد محمود خان کو کئی سال قبل سوات سے گرفتار کیا گیا اور اسے کالعدم تنظیم کا کمانڈر کےالزام میں انتیس ستمبر دو ہزار سولہ کو ملٹری کورٹ نے عمر قید کی سزا سنائی ۔وہ ساہیول جیل میں شدید علیل ہیں اور شوگر کے مرض کے باعث گردوں نے کام چھوڑ دیا ہے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ اس کے علاج کے احکامات جاری کئے جائیں ۔

عدالت نے تین دن کے اندر پنجاب حکومت کو درخواست گزار کے والد کا طبی معائنہ کرانے اور اس کےلئے میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کے احکامات جاری کردیئے ۔