03-02-2017

قومی اسمبلی نے غیرضروری مقدمہ بازی کی روک تھام کیلیے ’’مقدمہ بازی لاگت بل‘‘ کی اتفاق رائے سے منظوری دیدی ہے جس کے تحت جو فریق مقدمہ ہارے گا وہ جیتنے والے فریق کو مقدمے کی لاگت ادا کرے گا۔

اس بل کا اطلاق ابتدائی طور پر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ہوگا تاہم وزیر قانون زاہد حامد نے کہا ہے کہ اگر یہ سلسلہ کامیاب رہا تو اسے صوبوں تک توسیع دی جائے گی۔

وفاقی وزیر قانون زاہد نے مجموعہ ضابطہ دیوانی 1908اور مجموعہ ضابطہ فوجداری 1898 میں مزید ترمیم کرنیکا بل ’’مقدمہ بازی لاگت بل‘‘ ایوان میں پیش کیا اور اس کے اغراض ومقاصد بیان کرتے ہوئے کہا عدالتوں میں دیوانی اور فوجداری مقدمات بڑی تعداد میں التوا کا شکار ہیں، غیرضروری التوا کے حوالے سے عدلیہ کی خواہش تھی کہ سزا ہونی چاہیے، غیرضروری التوا کی وجہ سے مقدمات کی لاگت بھی بڑھتی ہے اور مقدمات کی سماعت بھی تاخیر کا شکار ہوتی ہے۔