07-02-2017

چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے محکموں کو اپنا قبلہ درست کرنے کی ہدایت کر دی ہے اور ریمارکس دیئے کہ آئندہ کوئی غفلت برداشت نہیں کریں گے۔

 چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے سرکاری اسپتالوں میں دل کے مریضوں کو غیرمعیاری اسٹنٹ ڈالنے سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت  کی ۔ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے واضح کیا کہ دل کے مریضوں کے لیے اسمگل شدہ اسٹنٹ ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے نہ ہی آئندہ غیر ذمہ دارانہ رویہ برداشت کیا جائے گا۔ انہوں  نے ریمارکس دیے کہ امریکا، جرمنی اور دیگر ممالک کے اسٹنٹس کی درخواستیں زیرالتوا ہیں،لگتا ہے کہ درخواستوں کو سرد خانے میں ڈال دیا گیا ہے۔

مریض کوعلم ہونا چاہیے کہ اس کو کون سا اسٹنٹ ڈالا گیا ہے جبکہ ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی بورڈ میں صرف ایک کارڈیالوجسٹ شامل ہے۔

عدالت نے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی بورڈ ممبران کی اہلیت کی تفصیلات طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت مارچ کے پہلے ہفتے تک ملتوی کردی۔