31-03-2018

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے غیر ملکی خاتون کی فریاد کا از خود نوٹس لیتے ہوئے حکم دیا ہے کہ تینوں بچیوں اور ان کے والد کو پیر کے روز عدالت کے روبرو  پیش کیا جائے۔

سپریم کورٹ کے ترجمان کے مطابق چیف جسٹس پاکستان نے درخواست کی سماعت کے دوران غیر ملکی خاتون کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ  لیتھیونین خاتون میمونہ کو 7 سال سے اس کی بیٹیوں سے ملنے نہیں دیا گیا جس پر چیف جسٹس نے خاتون کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ ہماری موجودگی میں فکر نہ کریں اور پریشان نہ ہوں۔

چیف جسٹس نے حکم دیا کہ پیر کے روز تینوں بچیوں اور ان کے والد کو عدالت میں پیش کیا جائے اور اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ کہیں تینوں بچیوں کو بیرون ملک نہ لے جایا جائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔