25-05-2017

پشاور ہائی کورٹ نے ہائیر ایجوکیشن کمیشن کو فاٹا کے مختلف علاقوں کے کالجز میں تعینات دو سو پچاس ایڈہاک لیکچرارز کو مستقل کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں ۔جسٹس وقار احمد سیٹھ اورجسٹس یونس تہیم پر مشتمل دو رکنی بنچ نے ایڈہاک لیکچرارز کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی ۔ جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ خیبر پختونخوا سے دو سو پچاس لیکچرارز کو فاٹا کے مختلف کالجز میں تعینات کیا گیا تھا جن کے نام مستقلی کے لئے  سال دو ہزار تیرہ میں کابینہ ڈویژن کو بھی بھجوائے گئے تھے تاہم فاٹا سیکرٹریٹ کی جانب سے ان کو مستقل بنیادوں پر تعینات نہیں کیا جا رہا ہے جو کہ ان غیر قانونی اور غیر آئینی اقدام ہے لہذا انہیں مستقل کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں۔