24-08-2017

پشاور ہائی کورٹ نے فاٹا ہیلتھ ڈائریکٹوریٹ ہیلتھ سروسز کے جوننئر کلرک  کی خدمات محکمہ صحت  خیبر پختونخوا کے حوالے کرنے کے احکامات معطل کرتے ہوئے ایڈیشنل چیف سیکرٹری فاٹا اور ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز سے جواب طلب کرلیا ہے ۔

جسٹس سید افسر شاہ اور جسٹس غضنفر علی پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزار فاٹا ڈائریکٹو ریٹ ہیلتھ سروسز میں جونیئر کلرک تعینات ہے جس کی خدمات صوبائی حکومت کے حوالے کی گئیں تھیں جبکہ وہ انیس سو تریانوے میں اورکزئی ایجنسی میں ایجنسی کیڈر کی پوسٹ پر بھرتی ہوا اور صوبائی حکومت کے پاس اس کی پوسٹ نہیں ہے لہذا اس فیصلے کو کالعدم قرار دیا جائے ۔