November 15, 2018

Khyber Pakhtunkhwa Judicial Academy, Peshawar
BROADCAST TIMING

Morning : 08:00AM to 11:00AM | Evening : 03:00PM to 07:00PM
Call Now: 091-9211654 | Email us: info@radiomeezan.pk

فوجداری نظام انصاف میں اصلاحات کا عندیہ ۔ جھوٹے گواہوں کو سزا دی جائے گی

09-11-2018

سپریم کورٹ کےسینئر ترین جج،جسٹس آصف سعید خان کھوسہ نےایک مقدمہ کی سماعت کے دوران فوجداری نظام انصاف میں اصلاحات کاعندیہ دیتے ہوئےریمارکس دیئے ہیں کہ انشااللہ بہت جلد جھوٹے گواہوں کو بھی سزائیں دی جائیں گی،عدالتیں ان سے بھی باز پرس کریں گی اور انہیں جیلوں میں بھیجاجائےگا۔ فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ دو تین جھوٹے گواہوں کو عمر قید کی سزا دے دی گئی تو نظام انصاف بہت حد تک د رست ہوجائے گا جبکہ جھوٹی گواہی پر سزائیں دینے والےججوں سے بھی پوچھ گچھ کی جائے گی۔

جسٹس آصف سعیدخان کھوسہ کی سربراہی میں جسٹس سردار طارق مسعود اور جسٹس مظہر عالم میاں خیل پرمشتمل سپریم کورٹ کے  تین رکنی بنچ نے اغوا برائے تاوان کے تین ملزمان محمد اسرار، اشفاق احمد اور عمران احمد کی سزائے موت کے خلاف اپیلوں کی سماعت

کی تو مقدمہ کی فائل کاجائزہ لینے اور وکلاء کے دلائل سننے کے بعد جسٹس آصف سعید خان کھوسہ نے ریمارکس دیئے کہ اگر ایک جج انصاف فراہم نہیں کرسکتا تو اسے منصف کی کرسی پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں، اللہ نے قرآ ن پاک میں بھی سچی گواہی دینےکاحکم دیاہے لیکن عدالتوں میں گواہ سچ نہیں بولتے ہیں ،انہوں نے کہا کہ اللہ کا حکم ہے سچ بولو چاہے تمھارے والدین اور رشتہ داروں کا ہی نقصان کیوں نہ ہو جائے لیکن پنجاب کے ہر مقدمہ میں یہی ہوتاہے،اسی وجہ سے ٹرائل کورٹ ملزم کو پھانسی دیتی ہےتو ہائی کورٹ اسے سزائے عمر قید میں تبدیل کردیتی ہے، جب معاملہ سپریم کورٹ میں آتاہے تو ملزم بری ہوجاتا ہے۔  جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ریمارکس دیئے کہ  پتہ نہیں جھوٹے گواہوں کو رات کو نیند کیسےآجاتی ہے؟کیا ان لوگوں کو اللہ سے ڈر نہیں لگتا، انہوں نے کہا کہ مقدمہ بریت کے لائق ہوتاہے اور جھوٹی گواہی سےٹرائل کورٹ ملزم کو عمر قید کی سزاسنادیتی ہے۔

فاضل عدالت نے فریقین کے وکلاء کے دلائل مکمل ہونے کے بعد ملزم محمد اسرار اور اشفاق احمد کو بری کردیا جبکہ عمران احمد کی پھانسی سزا کے خلاف اپیل خارج کردی ۔

Related posts