24-01-2017

سپریم کورٹ نے فوجی عدالتوں سے سزا یافتہ تین سابق فوجیوں کی جانب سے دائر کی گئی اپنی سزاوں کے خلاف دائر اپیلیں خارج کر دی ہیں ۔

جسٹس امیر ہانی مسلم کی سربراہی میں جسٹس مشیر عالم اور جسٹس مظہر عالم میاں خیل پرمشتمل تین رکنی بنچ نے پاک فوج کے سابق گنر محمد مشتاق ، حولدار افتخار حسین اور لانس نائیک مکرم حسین کی جانب سے کورٹ مارشل کئے جانے کی سزا کے خلاف دائر اپیل کی سماعت کی ۔

جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ تینوں ملزمان کی مقتولین کے ورثاء کے ساتھ صلح ہو چکی ہے اس لئے ان کی رہائی کے احکامات جاری کئے جائیں ۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے موقف اپنایا کہ آرمی ایکٹ ایک خصوصی قانون ہے اور اپنےقواعد و ضوابط ہیں اس لئے آرمی ایکٹ کے تحت دی گئی سزاوں پر کسی عام قانون کا اطلاق نہیں ہوتا ہے اور تینوں ملزمان کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کر دیا گیا ہے اب کوئی عام قانون اس فیصلے پر اثر انداز نہیں ہو سکتا ہے ۔

عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر تینوں ملزمان کی دائر اپیلیں خارج کرتے ہوئے کیس نمٹا دیا ۔