20-04-2017

پشاور ہائی کورٹ نے قبائلی علاقہ جات کے رہائشی کی گاڑی تحویل میں لینے اور عدالتی احکامات کے باوجود گاڑی قبائلی کے بجائے کسٹمز حکام کے حوالے کرنے پر کوہاٹ پولیس سے جواب طلب کر لیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ درخواست گزار بحیثیت آئی ڈی پی کوہاٹ میں مقیم تھا اور ان کی نان کسٹمز پیڈ گاڑی کوہاٹ پولیس نے قبضہ میں لی تاہم عدالت نے متعلقہ پولیس کو ہدایت کی کہ گاڑی درخواست گزار کو واپس کی جائے تاہم کوہاٹ پولیس نے ان کی گاڑی کسٹمز حکام کے حوالے کر دی جو کہ عدالتی احکامات کی خلاف ورزی ہے ۔

عدالت نے ابتدائی دلائل کے بعد کوہاٹ پولیس کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کرلیا۔