30-08-2017

پشاورہائی کورٹ  نے قتل کے مقدمے میں عدالت سے بری ہونے والے  پاکستان ایئر فورس کے اہلکار کو ملازمت پر بحال نہ کرنے پر جج ایڈوکیٹ جنرل کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کرلیا ہے ۔

جسٹس قلندر علی خان اور جسٹس ناصر محفوظ پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے درخواست گزار صداقت اللہ کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزار پاکستان ایئر فورس میں ایڈمن اسٹنٹ تعینات تھا اور دو ہزار نو میں قتل کے ایک مقدمہ میں نامزد ہوا تاہم دو ہزار سولہ میں عدالت نے اسے مقدمہ سے بری کردیا تھا بعد میں جب وہ پاکستان ایئر فورس حکام کے سامنے پیش ہوا تو انہیں بحال کرنے کی بجائے سزاد دی گئی اور ملازمت سے برطرف کر دیا گیا جو کہ ایئر فورس قوانین کے منافی اقدام ہے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ درخواست گزار کو یا تو بحال کیا جائے یا انہیں پنشن دی جائے