02-06-2018

 پشاور ہائی کور ٹ نے قومی اسمبلی کا حلقہ این اے ون دوبارہ پشاور کو دینے کیلئے دائر آئینی درخوواست پر الیکشن کمیشن پاکستان سے جواب طلب کرلیا ہے ۔

جسٹس ارشد علی اور جسٹس عتیق شاہ پر مشتمل پشاور ہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے سابق رکن قومی اسمبلی غلام احمد بلور کی جانب سے دائر آئینی درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اختیار کیا گیاہے کہ این اے ون کی ایک الگ تاریخی حیثیت ہے  تاہم  الیکشن کمیشن نے بغیر کسی وجہ کے حلقوں کے نام تبدیل کئے حالانکہ  حلقہ بندیوں کا حلقے کے نام تبدیل کرنے سے کوئی تعلق نہیں اور  نئی حلقہ بندیوں میں الیکشن کمیشن نے قومی اسمبلی کا حلقہ این اے ون چترال کو دیا ہے لہذارٹ پٹیشن منظورکرکے قومی اسمبلی کا حلقہ این اے ون واپس پشاور کو دیا جائے ۔

عدالت نے  ابتدائی دلائل کے بعد الیکشن کمیشن کو نوٹس جاری کرکے اگلی سماعت پر جواب طلب کرلیا۔