November 20, 2017

Khyber Pakhtunkhwa Judicial Academy, Peshawar
BROADCAST TIMING

Morning : 08:00AM to 11:00AM | Evening : 03:00PM to 07:00PM
Call Now: 091-9211654 | Email us: info@radiomeezan.pk

لاپتہ افراد کیس ، حراستی مراکز میں بے گناہ قیدیوں کو رہا کیا جائے ، سپریم کورٹ

14-11-2017

لاپتہ افراد سے متعلق کیس میں سپریم کورٹ کے جج جسٹس اعجاز افضل خان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ  اگر کسی نے جرم کیا تو اسے سزا ملنی چاہیے لیکن اگر حراستی مرکز میں کوئی بے گناہ قید ہے تو اسے رہا کیا جائے۔

جسٹس اعجاز افضل خان کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 2 رکنی بینچ نے لاپتہ افراد سے متعلق کیس کی سماعت کی۔ اس موقع پر حکومتی وکیل  نے عدلات کوبتایا کہ حراستی مراکز کے معاملے کا تعلق محکمہ داخلہ اور قبائلی علاقوں سے ہے، قبائلی علاقوں میں قائم فعال حفاظتی مراکز کی رپورٹ موصول نہیں ہوئی۔

جسٹس اعجاز افضل خان نے ریمارکس دیئے کہ ہم لاپتہ افراد کے مقدمات کے حل کے لیے ٹھوس حل تلاش کر رہے ہیں ۔

عدالت نے لاپتہ افراد مقدمات کی سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دی۔

Related posts