10-02-2017

سپریم کورٹ میں لوکل گورنمنٹ بلوچستان کے ترقیاتی فنڈ ز میں اربوں روپے کی خورد برد کے مقدمہ کے ملزم اور وزیر اعلی بلوچستان کے سابق مشیر خالد لانگو  کی نیب کے مقدمہ میں ضمانت بعد از گرفتاری  کی درخواست کی سماعت کےد وران چیف جسٹس پاکستان نے کہا ہے کہ عدالت پلی بارگین کے حوالے سے چیئرمین نیب کے اختیارات کا جائزہ لے گی ۔ عدالت نے  سوال اٹھایا کہ جب ملزم کی گرفتاری کی صورت میں بھی برآمد شدہ رقم اور جائیداد  واپس مل سکتی ہے تو پلی بارگین کے تحت ملزم کو رعایت کیوں دی جاتی ہے ؟

عدالت نے کہا کہ عدالت ان قواعد و ضوابط کا جائزہ لے گی کہ رقم کی برآمدگی اور اقرار  کے باوجود ملزمان کیوں بری ہو جاتے ہیں ؟ اس مقدمہ کے ملزم سے بھاری رقم برآمد ہوئی ہے اور اس نے اقرار بھی کر لیا ہے اس کے باوجود  اسے پلی بارگین کا فائدہ کیوں پہنچایا جا رہا ہے چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں جسٹس عمر عطاء بندیال اور جسٹس فیصل عرب پر مشتمل سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے مقدمہ کی مزید سماعت غیر معینہ مدت کےلئے ملتوی کر دی ہے۔