03-11-2017

سپریم کورٹ نے حکم امتناع کے باجود مارگلہ نیشنل پارک کی حدود میں تعمیرات اور درختوں کی کٹائی پر برہمی کا اظہارکرتے ہوئے آبزرویشن دی ہے کہ ممنوعہ علاقوں میں گھر کسی جج یا جرنیل کا ہو بلاامتیاز کارروائی کی جائے، اگر قوانین کا اطلا ق نہیں کیا جا سکتا تو پھر انھیں ختم کردیا جائے۔

 سپریم کورٹ کے جسٹس شیخ عظمت سعید اور  جسٹس قاضی فائز عیسیٰ پر مشتمل دو رکنی بینچ نے واضح کیا کہ حکم عدولی کرنیوالوں کےخلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے گی ۔عدالت نے اسلام آباد میں ایمبیسی روڈکی توسیع کیلیے درختوں کی کٹائی کے حوالے سے  بھی مفصل رپورٹ طلب کرلی۔