24-05-2017

خیبر پختونخوا سروسز ٹربیونل نے محکمہ صحت کے آٹھ ملازمین کے پشاور سے کوہاٹ اور سوات میں ہونے والے تبادلوں کے احکامات پر حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے حکومتی احکامات پر  عمل درآمد تاحکم ثانی روک دیا ۔

پیرا میڈیکس ایسوسی ایشن خیبر پختونخوا ، کلرکس ایسوسی ایشن اور کلاس فور ملازمین کی جانب سے دائر درخواست میں سروسز ٹربیونل میں موقف اپنایا گیا کہ میڈیکل ٹیچنگ انسٹی ٹیوشن ایکٹ کے تحت ہسپتالوں کو خود مختاری دی گئی ہے اور محکمہ صحت ان ملازمین کے تبادلے ان کی مرضی کے بغیر نہیں کر سکتے لیکن اس کے باوجود محکمہ صحت کی جانب سے آٹھ ملازمین کے تبادے پشاور سے دیگر اضلاع میں صرف اس بناء پر کئے ہیں کہ وہ ملازمین کے حقوق کی بات کرتے ہیں لہذا ان کے تبادلوں کے احکامات کو کالعدم قرار دیا جائے ۔