04-05-2018

پشاور ہائی کورٹ نے رستم پولیس کو پاکستانی خاتون سے شادی کرنے والے افغان پیش امام کو ہراساں کرنے سے روکتے ہوئے وزارت داخلہ سے جواب طلب کرلیا ہے۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس ایوب خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے درخواست گزار مولوی عبد الحق کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ درخواست گزار نے مردان کے علاقہ رستم میں پاکستانی خاتون سے شادی کر رکھی ہے اور اس کے بچے بھی ہیں تاہم پولیس اسے بلاجواز تنگ کرتی ہےلہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ پولیس کو اسے ہراساں کرنے سے روکا جائے اور اسے پاکستانی شہریت دی جائے ۔