16-10-2017

پشاور ہائی کورٹ نے مردان چمبر آف کامرس میں ایڈمسنٹریٹر کی تقرری کا حکم کالعدم قرار دینے کے خلاف دائردائر رٹ پر حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے ایڈمسنٹریٹر کو اپنا کام جاری رکھنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس یونس تہیم پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت سے استدعا کی گئی کہ ڈائریکٹر جنرل ٹریڈ آرگنائزیشن نے اس حوالے سے ایک عبوری ایڈمسنٹریٹر تعینات کیا ہے جو ووٹر لسٹ کو درست کرنے کے ساتھ ساتھ انتخابات کے انعقاد کا بھی کام کرے گا تاہم اس فیصلے کے خلاف سیشن جج مردان ، پشاور ہائی کور ٹ کے پاس تین الگ الگ اپیلیں جمع کیں جسے ہائی کورٹ اور سیشن جج مردان نے مسترد کریا جبکہ سیکرٹری انڈسٹریز نے ڈائریکٹر جنرل کے احکامات کالعدم قرار دے دیا حالانکہ یہ اقدام غیر قانونی ہے اور ایک فیصلہ کے خلاف مختلف اپیلیں دائر نہیں ہو سکتیں لہذا سیکرٹری کے احکامات کالعدم قرار دیئے جائیں اور ایڈمنسٹریٹر کی تقرری کو درست قرار دے کر انتخابات کا انعقاد کیا جائے ۔