19-04-2017

سپریم کورٹ نے عبدالولی خان یونیورسٹی مردان کے طالب علم مشال خان قتل کیس سے متعلق  پشاور ہائی کورٹ کو جوڈیشل کمیشن بنانے سے روک دیا ہے ۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں قائم بنچ نے  سپریم کورٹ میں مشال خان قتل کیس ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی ۔

عدالت نے پشاور ہائی کورٹ کو جوڈیشل کمیشن بنانے سے روکتے ہوئےاستفسار کیا کہ بتایا جائے کہ جوڈیشل کمیشن بنانے کا جواز کیا ہے ،ہمیں اپنے تحقیقاتی اداروں پر مکمل اعتماد ہے عدالت نے آئی جی خیبر پختونخوا کو حکم دیا کہ پولیس عدالت کو پیش رفت رپورٹ ہفتہ وار جمع کرائے۔

آئی جی خیبر پختونخوا نے عدالت کو بتایا کہ 80 فیصد  تحقیقات مکمل کرلی گئیں ہیں جبکہ  تحقیقات مکمل کرکے جلد چالان پیش کیا جائے گا۔

عدالت نے مشال خان قتل ازخود نوٹس کیس کی سماعت 27 اپریل تک ملتوی کردی ۔