16-08-2017

پشاور ہائی کورٹ نے عبدالولی خان یونیورسٹی کے طالب علم مشال خان قتل کیس میں جے آئی ٹی کے رکن اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایف آئی اے شاہد الیاس کا مردان سے اسلام آباد تبادلے کے احکامات معطل کرتے ہوئے ایف آئی اے حکام سے جواب طلب کر لیا ہے ۔

جسٹس اکرام اللہ خان کی سربراہی میں پشاور ہائی کورٹ کے دو رکنی بنچ نے یہ عبوری احکامات اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایف آئی اے مردان شاہد الیاس کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کرتے ہوئے جاری کئے ۔جس میں موقف اپنایا گیا کہ درخواست کی اہلیہ وزارت سیفران میں تعینات ہے اور ان کا تعلق بھی مردان سے ہے تاہم درخواست گزار کا تبادلہ مردان سے اسلام آباد کر دیا گیا ہے جو کہ سپاوس پالیسی کے منافی ہے جبکہ ان کا تبادلہ سابق رکن صوبائی اسمبلی جو کہ درخواست گزار کی بہن ہے کے اثر رسوخ کی بنا پر کیا گیا ہے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ درخواست گزار کے تبادلے کے احکامات منسوخ کئے جائیں ۔