20-09-2017

سپریم کورٹ  نے مضاربہ کیس میں شہریوں سے 5 کروڑ 40لاکھ روپے لوٹنے کے ملزم مفتی ثاقب کی ٹرائل کورٹ سے ملنے والی سز ا کے خلاف دائر کی گئی اپیل مسترد کر دی ہے

جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں جسٹس دوست محمد خان اور جسٹس سجاد علی شاہ پر مشتمل سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے مضاربہ اسکینڈل کیس کے ملزم مفتی ثاقب کی اپیل کی سماعت کی تو ملزم کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ملزم مفتی ثاقب نے گرفتاری کے بعد شہریوں کے  پیسے بھی واپس کر دیئے ہیں اور سزا بھی بھگت لی ہے ،انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ عدالت ٹرائل کورٹ کا فیصلہ ختم کرے تاکہ ملزم پر لگا ہوادھبہ صاف ہو سکے ،تاہم عدالت نے ان کی استدعا مسترد کرتے ہوئے درخواست خارج کر دی۔

یا درہے کہ ملزم مفتی ثاقب نے مضاربت کے لیے عام لوگوں سے اڑھائی کروڑ لیے تھے، جس پر مختلف شکایات پر ملزم کے خلاف نیب کا کیس بنایا گیا جس میں ٹرائل کورٹ نے اسے ایک لاکھ روپئے جرمانہ اور ایک سال قید کی سزا سنائی تھی ۔