16-02-2017

پشاور ہائی کورٹ نے پشاور میں شروع ہونے والی ریپڈ بس سروس میں خصوصی افراد کو سہولیات کی فراہمی کےلئے دائر رٹ پر چیف سیکرٹری ، سیکرٹری ٹرانسپورٹ  اور  سیکرٹری پلاننگ اینڈ ڈیویلپمنٹ  کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیاہے۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس محمد ایوب خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے گیارہ معذور افراد کی جانب سے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ درخواست گزارمعذور ہیں اور صوبائی حکومت ان کےلئے ٹرانسپورٹ  کی کوئی سہولت نہیں دے رہی ہے جبکہ صوبائی حکومت نے پشاور میں ریپڈ بس سروس کے منصوبے پر کام کا آغاز کیا ہے لہذا ریپڈ بس منصوبے میں خصوصی افراد کےلئے بس پر چڑھنے اور اترنے کےلئے خصوصی سہولت فراہم  کی جائے اور ہر سٹاپ پر معذوروں کےلئے علیحدہ راستہ بنایا جائے تاکہ وہ وہیل چیئر کے ذریعے بس میں چڑھ اور اتر سکیں ۔