12-04-2017

پشاور ہائی کورٹ نے چترال ، گلگت بلتستان اور دیگر علاقوں میں بولی جانے والی مقامی زبان کہوار کو مردم شماری کے فارم میں شامل کرنے کےلئے دائر رٹ درخواست پر وزارت داخلہ اور خیبر پختونخوا حکومت کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیا ہے ۔

دائر رٹ درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ درخواست گزاروں کی مادری زبان کہوار ہےجبکہ مردم شماری کے فارم میں صرف نو مادری زبانوں کا اندراج کیا گیا ہے اور باقی زبانوں کو دیگر میں شامل کیا گیا ہے تاہم کہوار ملک کے وسیع علاقوں میں بولی جانے والی بڑی زبان ہے اور اس کو مردم شماری فارم میں شامل نہ کرکے اس زبان کو بولنے والوں کو اپنے حق سے محروم رکھا گیا ہے جو کہ آئین کی خلاف ورزی ہے جبکہ عدالت عالیہ نے حال ہی میں کیلاز برادری کا نام مردم شماری فارم میں شامل کرنے کا حکم دیا ہے لہذا دائر رٹ پٹیشن منظور کرکے کہوار زبان کو مردم شماری فارم میں شامل کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں ۔