22-02-2017

پشاور ہائی کورٹ  نے مقامی ڈاکٹر  کے خلاف سائبر کرائمز کے تحت مقدمہ تفتیش کےلئے ایف آئی کو حوالے کرنے کےلئے دائر رٹ منظور کر لی اور آئی جی پولیس خیبر پختونخوا کو پندرہ روز  کے اندر اند ر  اس مقدمہ کو ایف آئی اے سائبر کرائمز ونگ کے حوالے کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے  ڈاکٹر سبطین انور  کی جانب سے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ درخواست گزار مردان میں نیورو سائیکاٹرسٹ ہے اور ڈاکٹر تسکین نے درخواست گزار کو مختلف طریقوں سے ہراساں کر رہا ہے لہذا سائبر کرائمز کے تحت ان کےدرج مقدمہ کی تفتیش پولیس سے لے کر ایف آئی اے کے حوالے کیا جائے ۔