21-06-2017

پشاور ہائی کورٹ نے خیبر پختونخوا کی ٹیکسٹائل ، شوگر ملز اور سی این جی اسٹیشنوں سے گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ سرچارج کی مد میں اربوں روپے ٹیکس وصولی کے خلاف حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے سوئی نادرن گیس کو صوبے کے ملز اور سی این جی اسٹیشنوں سے سات جولائی تک وصولی روک دی ہے ۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ اورجسٹس ارشد علی پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر نظر ثانی درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ محکمہ سوئی گیس نے ان انڈسٹریز پر جی آئی ڈی سی کی صورت میں ٹیکس لاگو کیا ہے تاہم عدالت نے اس ٹیکس کو درست قرار دیا تھا لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ اس فیصلے پر نظر ثانی کی جائے ۔