30-08-2017

مناسک حج کا آغاز ہو گیا ہے، عازمین حج وادی منیٰ میں پہنچنا شروع ہو گئے ، منیٰ میں خیمہ بستی قائم ہو گئی ہے جبکہ  عازمین حج کل رکن اعظم وقوف عرفات کیلئے روانہ ہوں گے۔

فریضہ حج کی ادائیگی کیلئے دنیا بھر سے آئے ہوئے لاکھوں عازمین حج آج  نماز فجر کے بعد لبیک اللھم لبیک کی صدائیں بلند کرتے وادی منیٰ کی طرف روانہ ہوئے ۔عازمین حج جمعرات 9 ذی الحج کو فریضہ حج کی ادائیگی کیلئے میدان عرفات پہنچیں گے۔ میدان عرفات میں ظہر اور عصر کی نمازیں ایک ساتھ ادا کریں گے جبکہ امام کعبہ مسجد نمرہ میں خطبہ حج دیں گے اور حجاج ﷲ رب العزت کے حضور ذکر و تسبیح کے ساتھ ساتھ خصوصی دعائیں کریں گے۔نماز مغرب سے قبل میدان عرفات چھوڑنے کا حکم ہے اور ایک ساتھ لاکھوں افراد میدان عرفات سے مزدلفہ رواں ہوں گے، مزدلفہ میں حجاج کرام مغرب اور عشاء کی نماز ایک ساتھ ادا کریں گے اور رات کھلے آسمان تلے قیام کریں گے۔نماز فجر کی ادائیگی کے بعد حجاج منیٰ میں قائم خیموں میں جائیں گے اور قربانی کے بعد بال منڈوائیں گے۔ پہلے دن شیطانوں کو کنکریاں مارنے کے بعد حجاج مکتہ المکرمہ جا کر مسجد الحرام میں طواف زیارت کریں گے۔ اس کے بعد دوسرے اور تیسرے دن بھی شیطان کو کنکریاں مارنا حج کے رکن اعظم میں شمار ہوتا ہے۔
تینوں دن منیٰ میں رات کا ایک خاص پہر گزارنا تمام حجاج پر واجب ہے۔ تیسرے دن شیطان کو کنکریاں مارنے کے بعد تمام حاجی مکہ روانہ ہوں گے اور اس طرح مناسک حج کی تکمیل ہو جائے گی۔