21-04-2017

پشاور ہائی کور ٹ نے مہمند ایجنسی میں ایجنسی سرجن کی پوسٹ پر تعینات گریڈ سترہ کے ڈاکٹر  کی تقرری کے خلاف دائر رٹ پر فاٹا حکام اور متعلقہ ڈاکٹر کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیا ہے ۔

چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ جسٹس یحیی آفریدی اورجسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں عدالت کوبتایا گیا کہ فاٹا حکام نے گریڈ سترہ کے ایک ڈاکٹر کو ایجنسی سرجن مہمند ایجنسی تعینات کیا ہے حالانکہ یہ آسامی گریڈاٹھارہ کی ہے اس طرح یہ اقدام غیر قانونی ہے لہذا ان کی تقرری کالعدم قرار دی جائے اور گریڈ اٹھارہ کے میڈیکل آفیسر کو ایجنسی سرجن تعینات کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں ۔