13-09-2017

پشاور ہائی کورٹ  مینگورہ بنچ دارلقضاء نے دیر لوئر کی ایک سو چونسٹھ ویلج کونسل کلاس فور ملازمین کی بحالی کے احکامات جاری کردیئے ہیں ۔

جسٹس مسرت ہلالی اور جسٹس ناصر محفوظ پر مشتمل دو رکنی بنچ نے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ محکمہ بلدیات دیر لوئر میں کلاس فور ملازمین کےلئے آسامیاں مشتہر ہونے کے بعد دیر لوئر کی مختلف ویلج کونسلز کے امیدواروں کے انٹرویو لئے گئے اور میرٹ کی بنیاد پر محکمہ نے تیس جون دو ہزار سولہ کو ملازمین کی تقرری حوالے سے آرڈر جاری کئے گئے تاہم اس وقت کے ڈی سی دیر لوئر نے سیاسی دباو میں آکر تکنیکی وجوہات کا بہانہ بیا یا اور ان تقرریوں کے احکامات کو منسوخ کرکے سیاسی بنیادوں پر کلاس فور ملازمین کا دوسرا حکم نامہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر بلدیات کے مشورے سے جاری کردیا جو کہ غیر قانونی اقدام ہے لہذا ان آسامیوں کے پہلے نوٹی فیکیشن کو درست قرار دیا جائے ۔

عدالت نے دلائل کے بعد مختصر فیصلہ سناتے ہوئے محکمہ بلدیات دیر لوئر کی جانب سے پہلے تقررنامہ میں موجود ایک سو چونسٹھ کلاس فور ملازمین کو بحال کرنے کے احکامات جاری کردیئے ۔