08-02-2017

پشاور ہائی کورٹ نے افغان شہری کو پاکستانی شناختی کارڈ جاری کرنے پر نادرا کے اہلکار کی برطرف کرنے پر نوٹس جاری کرکے ڈائریکٹر جنرل اور چیئرمین نادرا سے جواب طلب کر لیاہے  جسٹس روح الاآمین خان اورجسٹس لعل جان خٹک پر مشتمل دو رکنی بنچ نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر  نادرا سجاد شنواری کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گزار نادرا میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر تعینات تھا اور اسے ملازمت سے اس بناء پر برطرف کیا گیا ہے کہ اس نے گلبہار کے رہائشی وسیع اللہ کی ویری فیکیشن کی تھی جبکہ بعد میں اس نے اپنا کارڈ خود نادرا حکام کو واپس کر دیا تھا ۔ دائر رٹ میں موقف اپنایا کہ درخواست گزار کی ملازمت سے برطرفی اس بناء آئینی و قانونی نہیں کہ اس نے وسیع اللہ نامی شخص کے کارڈ کی تصدیق ضابطے پورے کرنے کے بعد کی تھی جبکہ برطرفی سے قبل اسے کسی قسم کا شوکاز نوٹس بھی جاری نہیں ہوا لہذا ان کے برطرفی کے احکامات کالعدم قرار دیئے جائیں ۔عدالت نے ابتدائی دلائل کے بعد ڈائریکٹر جنرل اور چیئرمین نادرا کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کر لیا۔