09-10-2017

جوڈیشل مجسٹریٹ پشاور اصغر شاہ نے نجی ہسپتالوں میں غیر قانونی طور پر گردوں کی پیوند کاری کرنے والے ڈاکٹر سمیت نو ملزمان کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کر دی اور انہیں ایف آئی اے کی تحقیقاتی ٹیم کے حوالے کر دیا ہے ۔

عدالت کوبتایا گیا کہ ملزمان ڈاکٹر عبد العزیز ، نوید احمد ، محمد فاروق ، نرسنگ اسسٹنٹ بلال یامین ، نرسنگ اسسٹنٹ محمد کامران ، شاہد اقبال ، عبد الرحمان اور عصمت اللہ پر الزام ہے کہ وہ نجی ہسپتالوں میں گردوں کی غیر قانونی پیوند کاری کے دھندے میں ملوث ہیں اور انہیں پبی کے نجی ہسپتال سے رنگے ہاتھوں گرفتار کیا گیا ہے  لہذا ملزمان سے مزید تفتیش اور اس مکروہ دھندے میں ملوث دوسرے اہم ملزمان کی نشاندہی کےلئے ملزمان کی جسمانی ریمانڈ میں توسیع دی جائے جسے عدالت نے منظور کرلیا۔