31-10-2017

لاہورہائی کورٹ نے سپریم کورٹ سے نااہل قرار دیئے گئے سابق وزیراعظم نوازشریف کے بطور پارٹی صدر انتخاب اور الیکشن ایکٹ میں ترمیم کے خلاف دائر رٹ  درخواست سماعت کیلئے منظور کرلی ہے۔

دائر رٹ میں الیکشن کمیشن پاکستان، سیکریٹری مسلم لیگ نون اور سیکرٹری قومی اسمبلی و سینٹ کو فریق بنایا گیا ہےاور  مؤقف اختیار کیا گیا ہےکہ پاناما لیکس سے دنیا بھر کے سیاستدانوں کے غیر ملکی اثاثوں کا انکشاف ہوا،پاناما لیکس سے نواز شریف کے غیر ملکی اثاثوں کی تفصیلات بھی سامنے آئیں جس پرعدالت عظمی نے فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف کو نااہل قرار دیا،مگر حکومت نے جلد بازی میں قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے الیکشن ایکٹ میں ترمیم منظور کروائی اور نوازشریف کو پارٹی صدر بنایا،عدالت نوازشریف کا بطور پارٹی صدر انتخاب کالعدم قرار دے۔

عدالت نے دائر درخواست پر فریقین کو 14نومبر کیلئے نوٹسز جاری کردئیے