17-02-2017

 سپریم کورٹ  نے نوشہرہ چھاونی میں وزارت ریلوے ، وزارت دفاع اور نجی فریق کے مابین اراضی کے تنازعہ  کے حوالےسے مقدمہ  کی سماعت کے دوران اٹارنی جنرل پاکستان استدعا پر  عدالت سے بارہ ثالثی کے ذریعے معاملہ حل کرنے کی اجازت دیتے ہوئے ایک ماہ  میں رپورٹ طلب کر لی ہے ۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں قائم سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ۔

سماعت کے دوران اٹارنی جنرل پاکستان نے عدالت کو بتایا کہ یہ سرکاری اراضی ہے اور اس حوالے سے سکرٹری ریلوے نی تجویز ہے کہ معاملہ عدالت سے باہر حل کر لیا جائے اور اس تجویز پر تمام فریقین متفق ہے ۔ عدالت نے دلائل کے بعد اٹارنی جنرل کو ثالثی کے ذریعے عدالت سے باہر معاملہ حل کرنے کی اجازت دے دی اور ایک ماہ کے اندر  اس کی رپورٹ طلب کرکے سماعت ملتوی کردی ۔