11-04-2018

پشاورہائی کور ٹ نے نیب راولپنڈی کو سابق ڈائریکٹر جنرل پی ڈی اے سلیم حسن وٹو کے خلاف تفتیش اور کاروائی کرنے سے روک دیا ہے ۔

جسٹس روح الااآمین خان اور جسٹس اکرام اللہ خان پر مشتمل دو رکنی بنچ نے حیات آباد ریذیڈنٹ  سوسائٹی کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ سابق ڈی جی پی ڈی اے سلیم حسن وٹو کے خلاف پلاٹ سکینڈل سمیت دیگر  سکینڈلز پشاور میں ہوئے تاہم نیب راولپنڈی نے ان کے تمام کیسوں کو وہاں منتقل کیا اور ان کے خلاف ان کیسز کی انکوائری  بھی وہاں من پسند افسران سے کی جائے گی لہذا جب کیسز پشاور کے ہیں تو انکوائری بھی پشاور میں کی جائے لہذا فاضل عدالت سے استدعا ہے کہ ملزم کے خلاف انکوائری واپس راولپنڈی سے پشاور منتقل کی جائے ۔

عدالت نے دلائل سننے کے بعد حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے نیب راولپنڈی کو ملزم کے خلاف انکوائری اور مزید کاروائی سے روک دیا اور متعلقہ حکام سے جواب طلب کر لیا۔