17-05-2017

سپریم کورٹ  نے نیشنل ریفائنری کو 30 کروڑ 50 لاکھ روپے کی رقم اسٹیٹ بینک کو ادا کرنے  کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں جسٹس عمر عطا بندیال اور جسٹس فیصل عرب پر مشتمل تین رکنی بینچ نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کی اپیل پر سماعت کی جس میں  موقف اپنایا گیا کہ اسٹیٹ بینک نے قانون کے مطابق جرمانہ کیا ہے جو قانو ن کے عین مطابق ہے جبکہ یہ  جرمانہ روزانہ 4 روپے ہر دس ٹن پر تاخیر سے ادائیگی پر کیا گیا کیونکہ اسٹیٹ بینک نے زرمبادلہ کی شکل میں سعودی کمپنی  کو اپنے پاس سے بروقت ادئیگی کی۔

عدالت نے ایف بی آر کا موقف تسلیم کرتے ہوئے نیشنل ریفائنری کی اپیل خارج کردی اور اسٹیٹ بنک کا نیشنل ریفائنری کو جرمانہ عائد کرنے کا فیصلہ برقرار رکھا۔

 واضح رہے کہ اسٹیٹ بینک نے 1998 میں معاہدے کی خلاف ورزی پر نیشنل ریفائنری پر جرمانہ عائد کیا تھا۔