03-02-2017

پشاور ہائی کورٹ نے عدالتی احکامات کے باوجود ورکرز ویلفیئر بورڈ  کے کیسز میں فریقین کو نوٹس جاری نہ کرنے پر ایڈیشنل رجسٹرار جوڈیشل کو انکرائری کرنے اور اس حوالے سے رپورٹ جمع کرنے کا حکم دیا ہے۔

جسٹس وقار احمد سیٹھ اورجسٹس لعل جان خٹک پر مشتمل دو رکنی بنچ نے ان کیسز میں تمام نئے آنے والے درخواست گزار کو کیس میں فریق بننے کی اجازت دے دی اور ایڈیشنل رجسٹرار کو ہدایت کی کہ وہ فریقین کی حاضری کو یقینی بنائے ۔عدالت نے صوبائی ورکرز ویلفیئر بورڈ  اور ورکرز ویلفیئر فنڈ اسلام آباد  کو بھی اپنا جواب تمام رٹ درخواستوں میں جمع کرنے کے احکامات جاری کئے ۔دائردرخواستوں میں موقف اپنایا گیا کہ درخواست گزاروں کو بلاوجہ نوکری سے برخاست کر دیا گیا ہے ان کی تنخواہیں بھی ادا نہیں کی جا رہی ہے اور نہ ہی انہیں مستقل کیا جا رہا ہے اس دوران عدالت نے استفسار کیا کہ جبکہ عدالت نے تمام کیسز پرنسپل سیٹ کو بھیجنے کا حکم دیا تو اس حوالے سے متعلقہ درخواستوں پر نوٹس جاری کیوں نہیں ہوا حالانکہ درجنوں لوگ یہاں پر آتے ہیں اور ان کے وکلاء کو نوٹس جاری نہیں ہوا ہے ۔عدالت نے اس ضمن میں انکوائری کا حکم دیتے ہوئے سماعت اگلی پیشی تک ملتوی کردی۔