06-10-2017

پشاورہائی کورٹ نے خیبرپختونخواحکومت کی جانب سے ورکرزویلفیئربورڈ کے صوبہ بھر کے مختلف سکولوں میں تعینات120ملازمین کی برطرفی کے احکامات کالعدم قرار دیتے ہوئے ان ملازمین کی بحالی کے احکامات جاری کردئیے ہیں ۔

جسٹس وقار احمد  سیٹھ کی سربراہی میں قائم دو رکنی بنچ نے 120ملازمین کی 84 رٹ درخواستوں کی سماعت  کی جس میں عدالت کو بتایاگیاکہ درخواست گذاروں میں پرنسپل سے لے کردرجہ چہارم تک کے ملازمین شامل ہیں جنہیں مختلف اوقات میں محکمہ ورکرزویلفیئربورڈ نے بھرتی کیاتھا اوران ملازمین کی بھرتی قانونی ضابطوں کے مطابق ہوئی تھی تاہم مختلف اوقات میں موجودہ صوبائی حکومت نے ان ملازمین کو ملازمت سے برطرف کردیا اوربعض ملازمین کو کہاکہ آپ کی خدمات کی مزید ضرورت نہیں ، بعض کو نااہل قرار دیا گیا جبکہ بعض اداروں کی بندش پرانہیں برطرف کیاگیا اور بعض ملازمین کو اداروں کی بندش کابہانہ بناکرفارغ کردیاگیاتھا ۔وکلاء صفائی نے عدالت کو بتایاکہ ان ملازمین کی برطرفی سے قبل کسی قسم کانوٹس نہیں دیاگیا نہ ہی انہیں صفائی کاموقع دیاگیاجبکہ ضابطے کی کارروائی بھی نہیں کی گئی اوران ملازمین کی برطرفی غیرقانونی طورپرکی گئی ہے لہذاان کی برطرفی کے احکامات کالعدم قراردیتے ہوئے ملازمت پربحال کیاجائے فاضل بنچ نے دونوں جانب سے دلائل مکمل ہونے پرملازمین کو ملازمت پربحال کرتے ہوئے صوبائی حکومت کے برطرفی کے احکامات کالعدم قرار دے  دیئے۔