17-03-2017

لاہور ہائی کورٹ نے وزیر اعظم کے مشیروں کی تعیناتی کے خلاف درخواستوں پر مشیروں اور معاونین خصوصی کے کردار، اختیارات ،تنخواہوں، مراعات اور دیگر امور پر مبنی تفصیلی رپورٹ طلب کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ عدالت اس بات کا جائزہ لینا چاہتی ہے کہ مشیروں اور وزیروں کی ذمہ داریاں کیا ہیں، کہیں مشیر وزیروں کے اختیارات تو نہیں استعمال نہیں کر رہے۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ سید منصور علی شاہ نے  دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ سرتاج عزیز اور طارق فاطمی مشیر ہو کر وزارت خارجہ چلا رہے ہیں۔ اسی طرح مشیر ہوابازی مہتاب عباسی اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کر رہے ہیں، درخواست گزار نے یہ بھی نشاندہی کی کہ مشیروں کی تعداد پانچ سے زیادہ نہیں ہو سکتی لیکن اس وقت وفاق میں مقررہ تعداد سے زیادہ مشیر کام کر رہے ہیں۔

عدالت نے مزید سماعت دو ہفتے کیلئے ملتوی کرتے ہوئے مشیروں اور معاونین خصوصی کے کردار، تنخواہوں، مراعات اور دیگر امور پر مبنی تفصیلی رپورٹ طلب کر لی ۔