08-09-2017

لاہور ہائی کورٹ نے وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کی نااہلی کےلئے دائر رٹ درخواست پر ایڈوکیٹ جنرل پنجاب کو معاونت کےلئے طلب کرتے ہوئے سماعت اٹھائیس ستمبر تک ملتوی کردی ہے۔

لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس عابد عزیز شیخ نے درخواست گزار شہری اظہر عباس کی جانب سے دائر رٹ درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ وزیر اعلی پنجاب نے ماس ٹرانزٹ اتھارٹی ایکٹ کے برعکس چیئرپرسن کا سرکاری عہدہ سنھبال رکھا ہے اور آئین کے مطابق عوامی عہدہ رکھنے والا شخص سرکاری عہدہ نہیں رکھ سکتا ۔اس لئِے وزیر اعلی پنجاب آئین کے آرٹیکل باسٹھ تریاسٹھ پر پورا نہیں اترتے لہذا انہیں نااہل قرار دیا جائے ۔

سرکاری وکیل نے عدالت میں موقف اپنایا کہ منتخب نمائندے سرکاری عہدہ رکھنے کے مجاز ہیں ان کا کردار سپروائزری ہوتا ہے اس پر عدالت نے استفسار کیا کہ سرکاری عہدہ رکھنے والے منتخب نمائندے عہدے سے منسلک مراعات کس طرح حاصل کرنے کے مجاز ہیں ؟ عدالت نے اٹھائس ستمبر کو ایڈوکیٹ جنرل پنجاب کو اس ضمن میں معاونت کےلئے طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی ۔