18-09-2017

اسلام آباد ہائی کورٹ نے اقامے کی بنیاد پروفاقی وزیر خارجہ خواجہ آصف کو نااہل قرار دینے کی درخواست کی سماعت کےلئے لارجر بینچ تشکیل دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق نے خواجہ آصف کی نااہلی کے لیے  تحریک انصاف کے رہنماء عثمان ڈار کی درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا کہ خواجہ آصف غیر ملکی کمپنی کے مستقل ملازم ہیں اور وہ ماہانہ 50 ہزار درہم لیتے ہیں جس پر انہوں نے انکم ٹیکس ادا نہیں کیا جبکہ خواجہ آصف کے اقامے کا معاملہ پاناما لیکس کیس جیسا ہی ہے اور انہوں  نے اپنے تمام اثاثے ظاہرنہیں کیے اور غیر ملکی کمپنی سے ہونے والی آمدنی کو چھپایا جس پر وہ آرٹیکل 62 پر پورا نہیں اترتے لہذا عدالت اثاثے ظاہر نہ کرنے پر خواجہ آصف کو نااہل قرار دے۔

عدالت نے درخواست کی سماعت  لارجر بینچ میں کرانے کے لیے معاملہ چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ کو بجھوا دیا۔